پنجاب میں خواتین کی نازیبا ویڈیوز بنانے والا گروہ بے نقاب

لاہور: پنجاب پولیس نے 5 خواتین سمیت 17 افراد پر مشتمل ایک گروہ گرفتار کرنے کا دعوی کیا ہے جو خواتین کی نازیبا ویڈیوز بنا کر انہیں بلیک میل کیا کرتا تھا۔

رپورٹس کے مطابق پنجاب کے ضلع پاکپتن میں خواتین کی غیر اخلاقی ویڈیوز بنانے والے گروہ کا انکشاف ہوا، جو خواتین کی غیر اخلاقی ویڈیوز بنا کر ان کو بلیک میل کرتا اور لاکھوں روپے بٹورتا تھا۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ مذکورہ گروہ میں خواتین کے علاوہ پولیس کے محکمے سے تعلق رکھنے والے کانسیٹبل بھی شامل ہیں۔ یہ گروہ پاکپتن سمیت اوکاڑہ اور ساہیوال  میں بھی وارداتیں کیا کرتا تھا، گروپ میں کل 17 افراد شامل ہیں جن میں 5 خواتین بھی موجود ہیں۔


مزید پڑھیں

اب گھر بیٹھے ایف آئی آر کا اندراج، تھانہ اور تفتیشی آفیسر کا نام ایس ایم ایس کے ذریعے وصول کریں


حکام کے مطابق بلیک میلرز پر مشتمل گروہ لڑکیوں کے ذریعے اپنا گھناؤنا کام جاری رکھے ہوئے تھا، یہ لڑکیاں دوسری خواتین سے ملاقات کرتیں، ملاقاتوں کے دوران ان خواتین کی غیر اخلاقی ویڈیوز بنائی جاتیں اور بعد ازاں انہی ویڈیوز سے ان کو بلیک میل کیا جاتا۔

غیر اخلاقی ویڈیوز بنانے والوں میں پولیس کے کانسٹیبل کی شمولیت کی بناء پر عوام میں گروہ کے حوالے سے شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے، عوام کا کہنا ہے کہ اگر قانون کے رکھوالوں نے ہی قانون شکنی کرنی ہے تو انسان کس پر یقین کر سکتا ہے؟


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *