آپ کا پاس ورڈ کسی اور کے پاس بھی ہے؟ انٹرنیٹ صارفین کیلیے حقیقت جاننا ممکن ہو گیا

کیلیفورنیا: گوگل نے محفوظ انٹرنیٹ کے عالمی دن پر انٹرنیٹ کو محفوظ کرنے والے دو نئے اقدامات کا اعلان کر دیا ہے، جس کے تحت اپنے پاس ورڈ کے محفوظ ہونے کے متعلق آگاہی حاصل کی جا سکے گی۔

یہ بات جان کے سب کو سکون کا سانس آئے گا کہ گوگل نے انٹرنیٹ پر پاسورڈ اور یوزر نیم کو محفوظ تر بنانے کے لیے اقدامات کرنے کا آغاز کر دیا ہے، جس کے تحت ابتدائی طور پر اکاؤنٹ پروٹیکشن اور پاسورڈ چیک اپ کے طریقہ کار متعارف کروائے گئے ہیں۔

انٹرنیٹ پر سیکورٹی کے جس قدر بھی اقدامات کر لیے جائیں لیکن جب گوگل اکاؤنٹ سے لاگ ان ہوا جاتا ہے تو یہ ناکافی ہو جاتے ہیں، لیکن اب گوگل نے کراس اکاؤنٹ پروٹیکشن کے نام سے نیا طریقہ متعارف کروا دیا ہے، جس سے گوگل اکاؤنٹ محفوظ ہو جائے گا۔

دوسرا طریقہ کار ڈیسک ٹاپ پر کروم براؤزر کے ذریعے استعمال ہوگا، اور یہ اصل میں کروم کا ہی اضافہ ہے، جس کے تحت یہ معلوم کرنا ممکن ہوگا کہ آپ کا پاسورڈ کہیں اور استعمال تو نہیں ہو رہا۔


مزید پڑھیں

ماہرین نے پیٹ کی خبر دینے والی انوکھی گیند تیار کر لی


اس کے استعمال کا طریقہ یہ ہے کہ جب اس کروم کو انسٹال کیا جاتا ہے اور آپ اس میں اپنا ڈیٹا داخل کرتے ہیں تو فوری طور پر گوگل یہ چیک کرتا ہے کہ یہ معلومات کہیں اور استعمال تو نہیں ہو رہیں، اگر ایسا ہو تو گوگل کروم آپ کو وارننگ جاری کر دیتا ہے،  جس سے اپ اپنا پاسورڈ بدل سکتے ہیں۔

بہت سے افراد اپنی انتہائی حساس معلومات جیسا کہ اپنے کریڈٹ کارڈز کی تفصیل، اپنا بینک اکاؤنٹ، اور ان لائن بینکنگ کا ریکارڈ گوگل اکاؤنٹ میں محفوظ کرتے ہیں، اور اگر پاسورڈ محفوظ نہ ہو تو ان تمام چیزوں کا نقصان ممکن ہوتا ہے۔

گوگل کے متعارف کروائے گئے نئے طریقہ کار سے اب آپ کوئی بھی سائٹ یا ایپلی کیشن استعمال کریں گے تو گوگل خود آپ کو بتائے گا کہ آپ کے اکاؤنٹ کا پاسورڈ ہیک ہے یا نہیں۔

اس فیچر کو انٹرنیٹ انجنیئرنگ ٹاسک فورس، ایڈوب اور اوپن آئی ڈی انفارمیشن کے تعاون سے بنایا گیا ہے۔


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *