خیبرپختونخوا میں اب اس قسم کا آٹا فروخت نہیں ہو سکے گا

پشاور: خیبر پختونخوا فوڈ سیفٹی اینڈ حلال فوڈ اتھارٹی، آٹا ڈیلرز اور پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن کے چیرمین نعیم بٹ کے مابین فوڈ فورٹفکیشن کے حوالے سے ایک اجلاس منعقد ہواجس میں کے پی کے فوڈ اتھارٹی کے فوڈ سٹینڈرڈز کے مطابق فورٹیفائیڈ آٹے کی فراہمی اور فروخت کو یقینی بنانے کے لیے آٹا ڈیلرز اور چیرمین سے مذاکرات کیے۔

ڈائریکٹرجنرل کے پی کے فوڈ اتھارٹی نے پاکستان فلور ملز ایسوسی ایشن کے چیرمین نعیم بٹ کو آٹے کی فورٹفکیشن کے عمل کو تیز کرنے کے لیے ہدایات جاری کیں۔


مزید پڑھیں

کراچی میں ایک اور نوجوان ’جعلی پولیس مقابلہ‘ کا نشانہ، لواحقین کا خودسوزی کا اعلان


فلور ملز ایسوسی ایشن کا کہنا تھا کہ اگر فلور ملز کو وافر مقدار میں مائکرو فیڈرز بروقت فراہم کیے جائیں تو فورٹفیکشن کے عمل کو تیزکیا جا سکتا ہے۔

ایسوسی ایشن نے درخواست کی کہ خیبر پختونحوا فوڈ سیفٹی اینڈ حلال فوڈ اتھارٹی پنجاب سے نان فورٹیفائد آٹے کی ترسیل کو بند کرنے کے لیے ضروری اقدامات کرے تاکہ صوبے میں غذائیت  سے بھرپور آٹے کی دستیابی یقینی ہو سکے۔

اجلاس میں فوڈ اتھارٹی کے ڈائریکٹر ٹیکنیکل ڈاکٹر عبدالستار شاہ نے آٹا ڈیلرز کو آئرن، زنک، فولک ایسڈ اور وٹامن بی 12 کی افادیت کے بارے میں آگاہی دی۔


مزید پڑھیں

عالمی عدالت نے پاکستان پر عائد بھاری ہرجانے کی سزا معطل کردی


ڈائریکٹر ٹیکنیکل نے بتایا کہ یہ ہمارے آنے والے نسلوں کی صحت کا سب سے اہم معاملہ ہے جس کے لیے ہم سب کو اپنا اپنا کردار ادا کرنا ہوگا۔

اجلاس کے آخر میں آٹا ڈیلرز نے ہر قسم کے تعاون کی یقین دہانی کراتے ہوئے کہا کہ وہ سب مل مالکان سے صرف اور صرف فورٹیفائیڈ آٹا ہی خریدیں گے۔

اس موقع پر فوڈ اتھارٹی کے ترجمان کا کہنا تھا کہ کے پی کے فوڈ اتھارٹی سب سے پہلے پشاور اور پھر صوبہ بھر میں ان ملوں کے خلاف قانونی کارروائی کرے گی جو فورٹیفیکیشن نہیں کررہے اور خیبر پختونخوا فوڈ سیفٹی اینڈ حلال فوڈ اتھارٹی پنجاب سے بغیر فورٹیفائیڈ آٹے کی ترسیل کو روکنے کے لیے ضروری اقدامات بھی اٹھائے گی۔


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *