پاکستان کا بینکی نظام مستحکم سے منفی ہوگیا

واشنگٹن: اقتصادی معاملات نظر رکھنے والے معروف امریکی مالیاتی ادارہ موڈیز نے پاکستان کے بینکنگ سسٹم کی درجہ بندی کو مستحکم سے منفی کردیا ہے۔


مزید پڑھیں

منی بجٹ کرنٹ اکاؤنٹ خسارے کو کم کرے گا، موڈیز


موڈیز کے مطابق پاکستان میں رواں سال معاشی ترقی کی رفتار سست ہو کر 4.3 فیصد ہوگئی ہے، ایک سال میں پاکستانی روپے کی قدر ڈالر کے مقابلے میں 30 فیصد گری اور شرح سود میں دسمبر 2017 سے فروری 2019 تک 450 پوائنٹ کا اضافہ ہوا جسکے بناء پر پاکستان کے بینکنگ سسٹم کو مستحکم سے منفی کردیا گیا ہے۔

واضح رہے کہ چند روز قبل مالیاتی امور سے متعلق خدمات فراہم کرنے والے بین الاقوامی ادارے اسٹینڈرڈ اینڈ پورز نے بھی پاکستان کی کریڈٹ ریٹنگ ’بی‘ سے ’منفی بی‘ کردی تھی تاہم ایجنسی کی جانب سے پاکستان کی درجہ بندی مستحکم کے طور پر برقرار رکھی گئی ہے۔


مزید پڑھیں

حکومتی اقدامات سے ناخوش، عالمی ادارہ نے پاکستان کی کریڈیٹ ریٹنگ کم کر دی


ریٹنگ ایجنسی کے مطابق پاکستان کی معاشی نشونما اور مالیاتی دباؤ کے باعث پاکستان کی کریڈٹ ریٹنگ ’بی‘ سے ’منفی بی‘ کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *