آئی ایم ایف کے ساتھ معاہدہ آخری بنانا ہوگا، اسد عمر

پشاور: صوبہ خیبرپختونخوا کے مرکز پشاورمیں چیمبر آف کامرس سے خطاب کرتے ہوئے  وفاقی وزیر خزانہ اسد عمر نے کھا ہے کہ  پاکستان بیل آوٹ پیکیج کے لیے آئی ایم ایف سے معاہدے کے قریب آگیا ہے، انکے مطابق آئی ایم ایف اور پاکستان کے اعداد و شمار کے فرق میں کمی آئی ہے اور عالمی مالیاتی ادارے نے اپنی پوزیشن بدل دی ہے۔


مزید پڑھیں

پاکستان کی مدد کے لیے تیار ہیں، سربراہ آئی ایم ایف


اپنے خطاب میں اسد عمر کا مزید کہنا تھا کہ آئی ایم ایف سے اچھا معاہدہ ہوگا تاہم ضرورت اس بات کی ہے کہ اس معاہدے کو اپنی نوعیت کا آخری بنائیں۔

اسد عمر نے کہا کہ ٹیکس نیٹ بڑھائے بغیرملک ترقی نہیں کرسکتا، پاکستان کو باہر سے آکر کوئی ٹھیک نہیں کرے گا، ہم ہی اسے ٹھیک کریں گے، ہم بہتر فیصلے کریں گے تو معیشت بہتر ہوگی اور یہ صرف سرمایہ کاری سے ہوگا، باتیں بہت ہوگئیں اب کام شروع کرنا ہے۔

وزیر خزانہ کا مزید کہنا تھا کہ ٹیکس نیٹ کا دائرہ وسیع کرنا ضروری ہے اس کے بغیرملک آگے نہیں بڑھے گا، انکے مطابق صرف ایف بی آر کے چھاپوں اور اور آڈٹ سے ٹیکس نہیں بڑھے گا۔


مزید پڑھیں

پاکستان اسٹیٹ آئل کو شدید مالی مشکلات کا سامنا


پڑوسی ممالک کے حوالے سے وزیرخزانہ نے کہا کہ بھارت کے ساتھ تجارت کے ذریعے تعلقات بہتر ہوسکتے ہیں جب کہ ایران اورافغانستان کے ساتھ تجارت کو ہر صورت بڑھانے کی ضرورت ہے اور افغانستان میں قیام امن کے لیے پاکستان جو کچھ کرسکتا ہے اُسے کرنا چاہیے۔

پشاور چیمبر آف کامرس سے خطاب کرتے ہوئے اسد عمر کا مزید کہنا تھا کہ خیبر پختونخوا میں بجلی اور گیس کی زیادہ پیداوار ہے، وزیراعظم نے ان دو شعبوں پر خصوصی توجہ دینے کی ہدایت کی ہے، تیسرا شعبہ یہاں سیاحت ہے جس کو فروغ دینا ہے، اگر کسی کو ان کے گھر کے پاس نوکری دینی ہے تو وہاں سیاحتی مقامات پر کام کرنا ہوگا، چوتھی خوبی پشاور کی یہ ہے کہ یہ وسطی ایشیاء کا مرکزی خطہ ہے جو ہماری خوش قسمتی ہے۔


مزید پڑھیں

پاکستان کا بینکی نظام مستحکم سے منفی ہوگیا


 

ملک میں زیر گردش این آر او کی خبروں کے حوالے اسد عمر نے کہا کہ حکومت نہ کسی کے ساتھ ڈیل کررہی ہے اور نہ کسی کو ڈھیل دینی ہے اور یہ بات متحدہ عرب امارات میں منعقد ہونے والی بین الاقوامی گورمنٹ سمٹ کے موقع پر لبنانی وزیراعظم سعد الحریری کو بھی بتادی ہے جبکہ سعد الحرییری نے کہا ہے کہ اس معاملے پر اب کوئی بات نہیں ہوگی۔


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *