جسے اللہ رکھے اُسے کون چکھے

مکہ مکرمہ: سعودی عرب کے شہر مکہ مکرمہ کی مسجد التنعیم کے قریب قتل کا مجرم آخری لمحے میں گردن زنی کی سزا سے بچ گیا۔

سعودی میڈیا کے مطابق قتل کے جرم میں سزائے موت پانے والے سعودی شہری کا سر قلم کیا جانا تھا اور مقتول کے ورثاء بھی سزا پر عملدرآمد کی لیے مقررہ مقام پر پہنچ چکے تھے۔


مزید پڑھیں

مقبوضہ کشمیر میں حریت پسندوں کے ہاتھوں کمانڈو سمیت دوبھارتی فوجی ہلاک


اس دوران مقامی شہریوں اور غیر ملکیوں پر مشتمل کثیر التعداد مجمع بھی سزا پر عملدرآمدگی کو دیکھنے کے لیے موجود تھا، جب کہ سزا کے خوف سے قاتل کا چہرہ بھی زرد پڑگیا تھا۔

سزا پر عملدرآمد سے چند ہی لمحوں قبل مقتول کے ورثاء نے قاتل کو معاف کرنے کا اعلان کیا جس پر پورا مجمع ہی حیران رہ گیا۔

مقتول کے ورثاء نے کہا کہ اللہ کی رضا کے لیے اپنے عزیز کے قاتل کو معاف کرتے ہیں۔


مزید پڑھیں

گجرانوالہ میں 12 سالہ ’’چھوٹا ڈان‘‘ گرفتار


مقتول کے ورثاء کے اعلان کے ساتھ ہی ہر طرف سے اللہ اکبر اور فریقین کو مبارکباد کی صدائیں گونجنے لگیں۔

یاد رہے کہ سعودی عرب میں قتل اور منشیات اسمگلنگ سمیت متعدد جرائم کی سزا موت ہے، وہاں اسلامی قوانین کے مطابق موت کی سزا سر قلم کرنے کے ذریعے دی جاتی ہے۔


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *