سورج کی روشنی بجلی کے بعد پانی بھی پیدا کرے گی

کیلیفورنیا: سولر پینل اب بجلی پیدا کرنے کے ساتھ صاف پانی بھی پیدا کر سکیں گے۔

حالیہ تجربے کے تحت بجلی کے حصول کی خاطر لگائے گئے سولر پینل سے صاف پانی کے حصول کا کامیاب تجربہ کیا گیا ہے، جس میں سولر پینل ہوا میں موجود نمی کو جذب کر کے اس سے پانی کشید کرتے ہیں اور پینے کے قابل یہ صاف پانی فوری استعمال میں لانے کے قابل ہوتا ہے۔

پروپاکستانی اردو کو دستیاب معلومات کے مطابق سولر پینل سے پانی بنانے کے منصوبے کے لیے بل گیٹس اور اور جیف بیزوس کی جانب سے  ایک ارب ڈالر کا فنڈ بھی جاری کیا جا چکا ہے۔

سولر پینل سے حاصل کردہ پانی انتہائی صاف اور پینے کے قابل پایا گیا ہے اور دو سولر پلیٹوں سے 10 لیٹر تک روزانہ پانی کا حصول ممکن ہو سکے گا۔

خیال رہے کہ ہوا سے پانی کشید کرنے کا خیال نیا نہیں ہے، توانائی کے مختلف ذرائع کو دوسرے ذرائع میں بدلنے کا عمل انسان کا قدیمی پسندیدہ عمل ہے،  دنیا بھر میں جیسے جیسے آبی ذخائر میں کمی واقع ہورہی ہے ویسے ویسے پانی حاصل کرنے کے متبادل طریقے ایجاد کیے جارہے ہیں اور ہوا سے پانی کشید کرنا بھی انہی میں سے ایک ہے۔


مزید پڑھیں

بھارت اپنی اندرونی دہشت گردی کا الزام چین اورپاکستان پر لگانا بند کرے


اس وقت دنیا کے کئی حصوں میں چھوٹے پیمانے پر اس تکینیک کے ذریعے مختلف منصوبے مقامی آبادی کی آبی ضروریات کو پورا کرر ہے ہیں۔

واٹر سیر نامی منصوبہ بھی ایسا ہی ایک منصوبہ ہے، جس میں ایک ٹربائن دن کے چوبیس گھنٹے فضا سے نم آلود ہوا حاصل کر کے اسے پانی میں بدلتی ہے، اور اس مقصد کے حصول کے لیے اسے کسی بھی قسم کی توانائی، بجلی یا کیمیل کی ضرورت محسوس نہیں ہوتی۔

اس کے زمین کے اوپر لگے بلیڈز ہوا کی طاقت سے گھومتے ہیں اور ہوا کو زمین کے اندر نصب چیمبر میں دھکیلتے ہیں، یہ چیمبر مٹی میں دبا ہوتا ہے اور ٹھنڈی مٹی کی وجہ سے خاصا سرد ہوتا ہے۔

یہ اپنے اندر موجود گرم ہوا کو بھی ٹھنڈا کردیتا ہے اور اس میں موجود پانی قطروں کی صورت میں چیمبر کی دیواروں پر جم جاتا ہے۔

یہ ٹربائن ہوا چلنے یا نہ چلنے دونوں صورتوں میں کام کرتی ہے اور روزانہ 37 لیٹرز پانی فراہم کرتی ہے۔

 


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *