پلوامہ حملہ اور پاکستان کے خلاف دراندازی کی وجہ آہستہ آہستہ سامنے آنے لگی

نئی دہلی: بھارتی حکمراں جماعت بھارتیہ جنتا پارٹی (بی جے پی) کے رہنما بی ایس یادیوراپا نے کہنا ہے کہ بھارت کی جانب سے پاکستان میں فضائی کارروائی پر ہماری جماعت کو انتخابات میں لوک سبھا کی 22 سے 28 نشستیں ملیں گی۔

ریاست کرناٹکا کے سابق وزیراعلیٰ اور بی جے پی یونٹ چیف بی ایس یادیوراپا نے اپنی جماعت کے لیے انتخابی مہم کا آغاز کرتے ہوئے یہ بات کہی ہے۔


مزید پڑھیں

پاکستان کا بھارت کو دوسرا سرپرائز، گرفتار بھارتی پائلٹ کو کل رہا کردیا جائے گا


انہوں نے میڈیا نمائندوں سے بات کرتے ہوئے دعویٰ کیا ہے کہ پلوامہ حملے کے بعد بھارت کی جانب سے پاکستانی حدود میں کی گئی کارروائی پر نوجوانوں نے جشن منایا، جس کے بعد انتخابات میں ہمارے لیے ریاست کرناٹکا میں لوک سبھا کی 22 سے زائد نشستیں جیتنا آسان ہوگیا ہے۔

دوسری جانب بھارت کی اپوزیشن جماعت کانگریس نے بی جے پی رہنما کے بیان کی شدید مذمت کی ہے، کانگریس کے کرناٹکا یونٹ کے صدر دنیش گندو راؤ نے کہا کہ بی جے پی رہنما کا بیان شرمناک اور غیر ذمہ دارانہ ہے۔

انہوں نے حکمراں جماعت پر تنقید کرتے ہوئے مزید کہا کہ بھارتیہ جنتا پارٹی کو ملک کی سیکیورٹی کی نہیں بلکہ انتخابات میں کامیابی حاصل کرنے کی فکر ہے اور یہی ان کی سیاست کا معیار ہے۔


مزید پڑھیں

بھارت کے بڑے بھی مودی کے خلاف بول پڑے، پلوامہ حملے کو سازش قرار دے دیا


ریاست کرناٹکا کے ایک اور سابق وزیراعلیٰ سدرامیاں نے بھی بی جے پی رہنما کے بیان کی مذمت کرتے ہوئے کہا کہ فوجیوں کی قربانیوں کو حکمراں جماعت الیکشن جیتنے کے لیے استعمال کر رہی ہے، یہ سیاسی خود غرضی ہے، متاثرہ خاندانوں کے آنسوؤں سے انتخابی نشستوں کی تعداد کا حساب لگانا انتہائی شرمناک ہے۔


Leave a Reply

Your email address will not be published. Required fields are marked *